یہ ویب سائیٹ صاحب عقل وفہم وفراست قارئین کے لئے انسان ساز انمول تحفہ ہے

تعارف معارف اہلبیت ؑ ٹرسٹ(رجسٹرڈ)

ٹھوکر نیاز بیگ لاہور

1989 ء میں علامہ محمد صادق حیدری ماہ رمضان میں نیازبیگ تشریف لائے تو نیازبیگ کے مومنین نے ان کے اخلاق اور علم سے متاثر ہو کر اگلے سال ماہ رمضان میں پھر دوبارہ نیازبیگ آنے کی دعوت دی پھر 1990 ء میں علامہ محمد صادق حیدری صاحب ماہ رمضان میں دوبارہ تشریف لائے اور مومنین نے ان سے بھر پور استفادہ کیا اور اپنی روحانی تشنگی کو دور کیا اور مزید خود نیازبیگ کے مومنین نے علامہ محمد صادق حیدری صاحب کو پھر اگلے تیسرے سال آنے کی دعوت دی تو جواب میں انھوں نے فرمایا: اگر آپ لوگوں نے کوئی علمی کام کرنا ہے تو پھر میں آؤں گا ورنہ میرا آنا مشکل ہے! کیونکہ ہم علماء لوگوں کا کام علم اور درس و تدریس سے ہے پھر آپ کی اعلٰی پائے کی بات سن کر مومنین نے اس مشن و کام کو کرنے کی حامی بھرلی، 1991ء میں جب آپ نیازبیگ آئے تو مومنین نے اس سلسلے میں پیشرفت کرنا شروع کی اور ان افراد میں سرفہرست رائے افسر علی بھٹی ،ڈاکٹر اقبال حسین ڈوگر،محمد اکرم ڈوگر ، ڈاکٹر ذوالقرنین، سید الطاف حسین شاہ، افضال حسین ڈوگر ودیگر برادران پیش پیش تھے

1992 ء میں مزید افراد اس کار خیر میں ساتھ شریک ھوگئے اور علامہ محمد صادق حیدری صاحب کو اپنے تعاون کا یقین دلایا ساتھ ادارہ ٹرسٹ کو منظم اور اس کے دستور لکھنےکا مشورہ پر عمل کرنے کا وعدہ کیا! اگلے سال ماہ رمضان 1993 ء میں تعلیم و تربیت کے لئے علامہ محمد صادق حیدری صاحب تشریف لائے ، تو 1993-07-12 ء جلسہ برائے وجود تشکیل ادارہ منعقد کیا گیا جس میں نو (9) افراد نے شرکت کی اور ادارے کے لئے نام ؟ “علامہ محمد صادق حیدری صاحب نے معارف اہل بیت ؑ ٹرسٹ تجویز کیا، علامہ محمد صادق حیدری صاحب کو باوجود ہمیشہ سر پرستی کے قبول کرنے سے انکار کے مومنین نے اصرار کرکے تاحیات اس ادارے کا خود اپنا چیئرمین بنایا اور انھوں نے مہربانی کرکے قبول کرلیا اور اہالیان نیازبیگ پر احسان کیا،

1993-07-16 ء ایک میٹنگ منعقد کی گئی جس میں بیس (20) افراد نے شرکت کی اور آئندہ میٹنگ کے لئے 1993-07-18 ء جس میں بارہ (12) افراد نے شرکت کی اس میٹنگ میں ایک کمیٹی تشکیل دی گئی اور ذمہ داری سونپ دی گئی کہ لوگوں کے پاس جا کر حصول زمین کی بات کی جائے۔
1993-08-06 ء کو ایک میٹنگ بلائی گئی جس میں تیرہ (13) افراد نے شرکت کی تشکیل آئین اور تشکیل کابینہ کی منظوری دی گئی۔
1993-09-05 ء معارف اہل بیت ؑ ٹرسٹ کو گورنمنٹ ایکٹ 1882 ء کے تحت رجسٹرڈ کروایا گیا اور No. RP/5056/L/5/93/1048 Dated: 12-09-1993 معارف اہل بیت ؑ ٹرسٹ کا سرکاری رجسٹرڈ نمبر
ہے 1994-02-18ء ٹرسٹ کی تحویل میں دوکنال زمین وارثان اکبر علی ڈوگر (مرحوم) نے اکبر علی ڈوگر (مرحوم) کے ایصال ثواب کی خاطر بذریعہ وقف نامہ (رجسٹرڈ) بحق معارف اہل بیت ؑ ٹرسٹ (رجسٹرڈ) وقف کی
1994-09-23 ء کو کتاب لقاء اللہ کی پرنٹنگ کے لئے بات کی گئی اور کتاب :اللہ سے ملاقات: چھپ گئی

1996-03-05 ء کو ایک ممبر نے ٹرسٹ کو فنڈنگ کرنے سے معذرت اور ممبرشپ سے استعفٰی دے دیا اس میٹنگ میں ممبران کی تعداد اٹھارہ (18) تھی اور فیصلہ کیا گیا جو ممبران بننے سے فارغیت چاہتے ہیں ان کو بھی فارغ کر دیا جائے اور ساتھ ہی جو ممبران میٹنگ میں شامل نہیں ہوتے ان کو بھی نوٹس جاری کیے جائیں اور بعدازاں ان کو بھی خصوصی ممبرشپ سے فارغ کیا جائے اور بھولے شہید کی چاردیواری کے لئے مبلغ 37000 روپے فنڈ بھی دیا گیا۔
1996-11-08 ء کو فیصلہ کیا گیا کہ 1996-11-13 ء کو نیازبیگ میں واقع دو کنال اراضی موقوفہ وارثان اکبر علی ڈوگر (مرحوم) کی چار دیواری کا افتتاح کیا جائے گا
1997-01-24 ء کو چند ممبران کو نوٹس جاری کئے گئے اور ساتھ ہی فیصلہ کیا گیا کہ جن ممبران نے سالانہ فنڈ ادا نہیں کیے ان کی رکنیت خارج کی جائے رائے افسر علی بھٹی کو بھی اس تاریخ میں خود وائس چیئرمین منتخب کیا گیا
1999-07-25 ء کو الزھرا ؑ ماڈل سکول کا آغاز کیا گیا

2000-07-16 ء کو فیصلہ طے پایا جو ممبران ٹرسٹ کے آئین پر پورا نہیں اترتے ان کی رکنیت منسوخ کی جائے اور ساتھ ہی وہ ممبرز جو ٹرسٹ میں دلچسپی نہیں لیتے ان کو بھی نوٹس جاری کئے جائیں
2001-07-20 ء کو رائے حاکم علی بھٹی (مرحوم) ولد رائے انور علی بھٹی (مرحوم) نے ایک کنال پانچ مرلے زمین ٹرسٹ کی تحویل میں دی،
2003-04-11 ء کو فیصلہ کیا گیا کہ بھولے شہید کی اندرونی بلڈنگ کی بنیادیں رکھی جائیں گی

2004-04-11 ء کو ایک میٹنگ بلائی گئی جس میں وائس چیئرمین رائے محمد نواز بھٹی(مرحوم) کے لئے فاتحہ خوانی کی گئی
2005-04-01 ء کو ایک میٹنگ بلائی گئی جس میں الزھرا ؑ ماڈل سکول میں سرداب(تہہ خانہ) کی تعمیر شروع کی گئی
2005-10-23 ء کو ٹرسٹ کا وائس چیئرمین منتخب کیا گیا
2006-04-02 ء کو سکول کی چھتوں کو مکمل کرنے کی منصوبہ بندی کی گئی
2006-11-05 ء کو سرداب (تہہ خانے) کا فرش ڈلوایا گیا

2008-09-11 ء بھولے شہید کو تعمیر کرنے پر زور دیا گیا
2009-05-08 ء کو سکول میں سمر کیمپ لگایا گیا
2009-08-30 ء کو بھولے شہید کی بیرونی چار دیواری اونچی کی گئی
2009-11-21 ء کو اس کو مکمل کر لیا گیا
2010-03-03 ء کو بھولے شہید میں پہلے سے موجود کمروں کے اوپر دوسری بلڈنگ تعمیر کی گئی اور مدرسہ کی تجویز پیش کی گئی
2010-07-18 ء کو الشہید الحسین علیہم السلام مدرسہ اور تحقیقی سنٹر میں باقاعدہ تعلیم کا آغاز کیا گیا اور مزید اس میں طے پایا گیا کہ مدرسہ کے

اندرونی امور میں عالم کے علاوہ خود کوئی غیر عالم دخل اندازی نہیں کرسکتا!
2010-08-08 ء کو سابقہ وائس چیئرمین کو ادارے میں آئین میں ترمیم و تبدیلی واقع کرکے ممبران کے سامنے پیش کیا گیا جو کہ اکثریت سے خود تمام ممبران نے قبول کر لیا اور علامہ محمد صادق حیدری صاحب کو سر پرست اعلٰی کی حیثیت سے تا حیات خود منتخب کیا گیا اور 9 نئے ممبران نے خصوصی ممبر بننے کے لئے اظہار آمادگی کی
2010-08-22 ء کو نئے جنرل سیکرٹری کو ریکارڈ تحویل میں دیا گیا
2011-01-10 ء کو سکول میں موسم سرما کی شدت سے بچنے کے لئے حفاظتی انتظامات کئے گئے
2011-01-27 ء کو الطاف حسین شاہ نے چیئرمین ٹرسٹ کے عہدے سے دستبردار ہونے کا اعلان کیا اور ٹرسٹ کی تمام ذمہ داریوں سے معذرت کی جسے لکھ کر جنرل سیکرٹری کو پیش کیا اور ٹرسٹ کے سرپرست اعلٰی نے اس استعفٰےکو 2011-01-27 ء کو ہی قبول کرلیا
2011-01-30 ء کو جنرل باڈی میٹنگ ہوئی جس میں سرپرست اعلٰی نے سابقہ چیئرمین اور وائس کے پیش کردہ استعفٰے پر روشنی ڈالی اور ساتھ ہی رائے جواد رضا بھٹی کو صدر منتخب کرنے کی تجویز دی اور تمام ممبران نے قبول کی اور ساتھ ہی شاہد اقبال کو کابینہ کا جنرل سیکرٹری، محمد اکرم ڈوگر کو فنانس سیکرٹری، توقیر عباس ڈپٹی جنرل سیکرٹری مقرر کیا گیا ان تمام کابینہ کے ممبران سے علامہ سید حسنین نقوی صاحب نے حلف لئے، خصوصی فیصلہ کیا گیا کہ ادارے کا مقامی سیاست سے کسی قسم کے بلاواسطہ یا بلواسطہ کوئی تعلق نہ ہوگا ، اس میٹنگ میں 25 افراد نے شرکت کی
2011-02-23 ء کو فیصلہ کیا گیا کہ ادارے کی بلڈنگ کو جلد از جلد مکمل کیا جائے
2011-04-10 ء کو بھولے شہید میں دو بیت الخلاء اور ایک حمام تعمیر کیا گیا
2011-07-06 ء کو ایک اور فیصلہ کیا کہ بھولے شہید پر ڈبل سٹوری تعمیر کی جائے
2011-09-07 ء الشہید الحسین علیہم السلام مدرسہ اور تحقیقی سنٹر پر شہیدہ ارشاد بیگم مہتم کی دی ہوئی رقم سے بلڈنگ کی تعمیر کا کام شروع کیا گیا

2011-11-26 ء کو دونوں اداروں میں دو عشرہ محرام الحرام کروانے کا فیصلہ کیا گیا
2012-02-05 ء کو بھولےشہید کی چاردیواری پر خاردار تار لگائی گئی
2015-07-12 ء کو سابقہ جنرل سیکرٹری ناظر حسین کی وفات کے بعد اشفاق حیدر بھٹی کو ٹرسٹ کا جنرل سیکرٹری اور رائے طالب حسین کو کابینہ کا جنرل سیکرٹری مقرر کیا گیا